50

محرم کے حوالے سے دہشت گردی کے خدشات موجود ہیں، آئی جی سندھ

آئی جی سندھ کلیم امام کا کہنا ہے کہ محرم الحرام کے حوالے سے دہشتگردی کے خطرات موجود ہیں۔

سندھ پولیس کے دو روزہ ورکشاپ کے دوران محرم الحرام کے سیکیورٹی معاملات سے متعلق میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئےآئی جی سندھ کلیم امام کا کہنا تھامحرم کے دوران دہشت گردی کے خدشات موجود ہیں ،پولیس ،رینجرز اور دیگر سیکیورٹی اداروں کے ساتھ مل کر ایسے واقعات سے بچنے کے انتظامات کیےگئے ہیں ۔

آئی جی سندھ نے بتایا کہ محرم الحرام کے دوران 14 ہزار سے زیادہ مجالس کو سیکیورٹی دیں گے،چار ہزار گاڑیاں اور ہزاروں اہلکار ڈیوٹی سر انجام دیں گے ۔

مزید پڑھیں: پاکستان کا اہم ترین اور متنازعہ ترین قانون۔

کلیم امام نے مزید بتایا کہ سندھ پولیس کو رواں سال اب تک 87 تھریٹ الرٹ موصول ہو چکی ہیں ، جن پر ٹیمیں تشکیل دے کر لوگوں کو گرفتار کیا جا چکا ہے۔

آئی جی سندھ نے کہا کہ ہمارا کام ہے کہ ہم اپنی انٹلیجنس بہتر کریں تاکہ بہتر طور پر شہریوں کو تحفظ سکیں۔ شہریوں کا کام ہے کہ وہ ہمیں ضرور آگاہ کریں ہم شہریوں کےرسپونس پر ضرور کارروائی کریں گے۔

انہوں نے کہا کہ سندھ پولیس اپنے افسران و اہلکاروں کی بہترین تربیت پر یقین رکھتی ہے ۔ہمارے انسٹیٹیوٹ پولیس کی تربیت کے لیے قائم ہیں ،ہم نے اپنی صلاحیتوں میں اضافہ کرنا ہے ۔

واضح رہے کہ سندھ پولیس نےدو روزہ ورکشاپ کا انعقاد کیا ہے جس میں پہلا دن انویسٹیگیشن اور دوسرا دن ٹرینگ کے حوالے سے ہے ۔آج پولیس کے پندرہ مختلف اداروں کے سربراہان نے اپنے شعبوں کے حوالے سے آگاہ کیا ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں