51

پابندیاں توڑو، باہر نکلو؛ نظر بند حریت قیادت کی مقبوضہ کشمیر کے عوام سے اپیل

مقبوضہ کشمیر میں بھارتی بربریت اور کرفیو کے باوجود گھروں میں نظربند حریت قیادت نے کشمیری عوام سے اپیل کی ہے کہ بھارتی پابندیوں کی پرواہ کیے بغیر باہر نکلا جائے۔

آج نماز جمعہ کے بعد مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرنے اور بھارتی پابندیوں کے خلاف پُرزور احتجاج کیا جائے گا، پوری وادی میں مظاہرے ہوں گے جب کہ سری نگر میں اقوام متحدہ کے مبصر دفتر تک مارچ کیا جائے گا۔

مزید پڑھیں: شمالی کوریا نے امریکی وزیر خارجہ کو زہریلا پودا قرار دیدیا

قابض بھارتی افواج کا لاک ڈاؤن تیسرے ہفتے بھی برقرار ہے اور مظاہرے کی کال دیئے جانے کے بعد بزدل بھارتی فوج نے نہتے کشمیریوں کے خلاف ایکشن کی تیاری کر لی ہے، سری نگر اور دیگر علاقوں میں سیکیورٹی مزید سخت کر دی گئی ہے جب کہ لوگوں کی گرفتاریوں کے لیے چھاپے بھی مارے جا رہے ہیں۔

برطانوی میڈیا کے مطابق سری نگر میں جگہ جگہ رکاوٹیں کھڑی کر دی گئی ہیں جب کہ اقوامِ متحدہ کے فوجی مبصرین کے دفتر جانے والے 4 راستے جمعرات کی رات سے ہی بند ہیں۔

پاکستان کے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے اس خدشے کا اظہار کیا ہے کہ بھارت مقبوضہ کشمیر میں احتجاج کرنے والوں کے خلاف بڑا آپریشن کر سکتا ہے جس سے خون خرابے کا خدشہ ہے۔

مزید پڑھیں: چیف الیکشن کمشنر نے 2 نئے اراکین سے حلف لینے سے معذرت کر لی

خیال رہے کہ بھارت نے مقبوضہ کشمیر میں 5 اگست سے غیر معینہ مدت تک کے لیے کرفیو نافذ کر رکھا ہے، مقبوضہ وادی میں لاکھوں کی تعداد میں بھارتی فوجی تعینات اور حریت اور سیاسی قیادت گھروں میں نظر بند یا جیلوں میں قید ہے۔

پاکستان نے مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی پامالیوں کا معاملہ عالمی عدالت انصاف میں لے جانے کا اعلان کر رکھا ہے جب کہ اقوام متحدہ اور امریکا سمیت کئی ممالک مقبوضہ کشمیر کی صورت حال پر تشویش کا اظہار کر چکے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں