35

بھارتی صحافی نے مودی نواز بھارتی میڈیا کا بھانڈا پھوڑدیا

مقبوضہ کشمیر میں مودی سرکار کی جانب سے کئے جانے والے ظلم پر پاکستان سمیت دنیا بھر کے ممالک اور انسانی حقوق کی تنظیمیں سراپا احتجاج ہیں ۔

اقوام متحدہ کی جانب سے مذمت کی گئی ہے جبکہ کشمیر کی موجودہ صورتحال پر اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کا ہنگامی اجلاس بھی بلایا گیا ہے تاہم اس کے بعد کشمیری عوام پر کئے جانے والے ظلم پراب بھارت میں بھی آوازیں بلند ہونے لگی ہیں ۔

بھارتی صحافی رفعت جاوید نے مودی نواز بھارتی میڈیا کا بھانڈا پھوڑتے ہوئے کہا کہ وادی میں جگہ جگہ ناکے لگے ہیں، مساجد کے اطراف خار دار تارے لگائی گئیں ہیں، جبکہ مواصلات کا نظام بھی بند ہے۔

صحافی رفعت جاوید نے مقبوضہ وادی میں سب اچھا ہے کا دعوی مسترد کر تے ہوئے کہا ہےکہ ڈل جھیل پر کشمیریوں کو قید کیا گیا ہے

جبکہ کوریج کے دوران سی آر پی ایف کے جوانوں نے کیمرہ چھیننے کی کوشش بھی کی ہے ۔۔

دوسری جانب امریکی سینیٹر کوری بوکر نے بھی کشمیریوں کے حق میں آواز بلند کردی ہے کوری بوکر کا کہنا ہے کہ کشمیر میں حق ودارادیت پر جمہوری اصول کی پاسداری ہونی چاہیے اور بھارت سے جمہوری پاسداری کو یقینی بنوانا ہماری بھی ذمہ داری ہے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں