31

خطےمیں امن کیلئےامریکی صدرکامصالحانہ کردارخوش آئندہے،فردوس عاشق اعوان

وزیراعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعات ونشریات ڈاکٹرفردوس عاشق اعوان نےکہاہےکہ مقبوضہ کشمیرکی صورتحال اورخطےمیں امن کے لئےامریکی صدرڈونلڈٹرمپ کامصالحانہ کردار خوش آئند ہے،وزیراعظم عمران خان نےجس پُرزور طریقے سےدنیا میں کشمیر کا مقدمہ پیش کیا، قوم کو اس پر فخر ہے۔

سماجی رابطےکی ویب سائٹ ٹویٹرپربیان دیتے ہوئےفردوس عاشق اعوان کاکہناتھاکہ عالمی برادری یکطرفہ بھارتی اقدامات اور کشمیر کی صورتحال کا نوٹس لیتے ہوئے تشویش کا اظہار کررہی ہے۔ انہوں نےکہاکہ سلامتی کونسل کے اجلاس سے بھارتی دعوے کی نفی ہوئی کہ کشمیربھارت کا اندرونی معاملہ ہے،بھارت یکطرفہ اقدامات سے حقائق تبدیل کر سکتا ہے اور نہ ہی دنیا کی آنکھوں میں دھول جھونک سکتا ہے۔

معاون خصوصی وزیراعظم کاکہناتھاکہ بھارتی ناانصافیوں اور کشمیریوں پر ظلم کا مقدمہ ہر فورم پر پیش کرتے رہیں گے۔ ہر فورم پر بھارت کو اس کے ظلم و بربریت کا آئینہ دکھائیں گے۔

انہوں نےمزیدکہاکہ حق خودارادیت کی جدوجہد میں پاکستان کشمیریوں کے ساتھ ڈٹ کر کھڑا ہے۔ آزادی کی صبح تک کشمیریوں کی سیاسی، سفارتی اور اخلاقی حمایت جاری رہے گی۔

واضح رہےکہ وزیراعظم عمران خان اور امریکی صدر ٹرمپ کے درمیان ٹیلی فونک رابطہ ہواہے جس میں مقبوضہ کشمیر کی حالیہ صورتحال پرتبادلہ خیال کیاگیا۔

وزیراعظم عمران خان اور امریکی صدر ٹرمپ کے درمیان 16 اگست اور پیر کی رات 10 بجے ٹیلی فونک رابطہ ہوا۔جس میں وزیراعظم نے امریکی صدر کو آگاہ کیا کہ بھارت کے یکطرفہ فیصلے کا مقصد عالمی سطح پرتسلیم شدہ متنازع علاقےکی خصوصی حیثیت اوروہاں مسلم اکثریت کواقلیت میں تبدیل کرنا ہے۔

گفتگو کےدوران عمران خان نے امریکی صدرسے کہا کہ مقبوضہ وادی میں کرفیو جلد ہٹایا جائے، اقوام متحدہ مبصر مشن بھیجے جائیں اور اس بحران کا حل نکالا جائے۔ وزیراعظم کی جانب سےکہا گیا کہ صدر ٹرمپ عالمی تنظیموں کے ساتھ بھارتی حکومت کے وعدوں کی پاسداری کے لیے اپناکردار ادا کریں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں