52

پنجاب میں کنٹریکٹ ملازمین کیلئے بڑی خوشخبری آگئی

لاہور: پنجاب میں کنٹریکٹ ملازمین کے لیے بڑی خوشخبری آگئی ہے، حکومت کی طرف سے کنٹریکٹ ملازمین کی کنفرمیشن پالیسی تبدیل کردی گئی ہے،اب کنٹریکٹ ملازمین چار سال کی بجائے تین سال کی سروس کے بعد ریگولر کیے جا سکیں گے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ گورنر پنجاب کی منظوری کے بعد پنجاب ریگولرائزیشن آف سروس آرڈیننس 2019 جاری کردیاگیاہے۔ فیصلے سے محکمہ صحت سمیت دیگر سرکاری ملازمین کی بڑی تعداد مستفید ہوگی ۔

دوسری طرف سرکاری کنٹریکٹ ملازمین کیلئے خوشخبری یہ ہے کہ وفاقی حکومت نے ہزاروں کنٹریکٹ ملازمین مستقل کرنے کا فیصلہ بھی کرلیا ہے۔

مقامی ذرائع ابلاغ میں چھپنے والی خبروں کے مطابق وزارتوں اور ڈویژنز کے کنٹریکٹ ملازمین کو مستقل کرنے کیلئے کمیٹی تشکیل دیدی گئی ہے۔ کمیٹی کنٹریکٹ ملازمین کی مستقلی بارے یکساں پالیسی تیار کرے گی۔

اسٹیبلشمنٹ ڈویژن نے کمیٹی کی تشکیل کا نوٹیفیکیشن جاری کر دیا ہے جس کے مطابق وزیراعظم کے مشیر ادارہ جاتی اصلاحات کو اس کمیٹی کا سربراہ مقرر کر دیا گیا ہے۔

ذرائع کا کہناہے کہ یہ کمیٹی مختلف وزارتوں اور ڈویژنز کے کنٹریکٹ ملازمین کو مستقل کرنے کے لیے اپنے سفارشات حکومت کو پیش کریگی اس کے بعد حکومت ملازمین کی مستقلی کا فیصلہ کریگی۔

ذرائع کا کہناہے کہ کمیٹی کی طرف سے کئے جانے والے فیصلے کے بعد ہزاروں ملازمین مستقل ہوجائیں گے۔

یاد رہے کہ اس سے قبل 2012میں پیپلزپارٹی کی حکومت نے بھی وزارتوں،ڈویژنوں ،ماتحت اداروں اور نیم خود مختاراداروں میں کنٹریکٹ اور ڈیلی ویجز پر تعینات ملازمین کو مستقل کیا تھا۔

اس مقصد کے لیےسید خورشید شاہ کی سربراہی میں کابینہ کی ذیلی کمیٹی برائے ریگولرائزیشن آف کنٹریکٹ و ڈیلی ویجز ملازمین قائم کی گئی تھی اور اس کمیٹی کی سفارش تقریباً 60 ہزار کے قریب عارضی اور کنٹریکٹ پر تعینات ملازمین کو مستقل کیا گیا تھا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں