39

ہم جھک کر نہیں،سر اٹھاکر بات کرنے کیلئے امریکا آئے ہیں ، شاہ محمود قریشی

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے واضح کیا ہے کہ ہم ہاتھ میں کشکول لیکر کچھ مانگنے کیلئے امریکا نہیں آئے ہیں۔

واشنگٹن کے کیپٹل ون ارینا اسٹیڈیم میں پاکستانی کمیونٹی سے خطاب کرتے ہوئے وزیر خارجہ نے کہا کہ نیا پاکستان صرف ہم بناسکتے ہیں کوئی اور نہیں بناسکتا، پرامن اور خوش حال پاکستان کا خواب لے کر امریکا آئے ہیں، ہم یہاں پرامن خطے اور خوشحال پاکستان کا پیغام لیکر آئے ہیں،ہم جھک کر نہیں،سر اٹھاکر بات کرنے کیلئے امریکا آئے ہیں۔

جلسے سے خطاب کرتے ہوئے وزیرخارجہ نے کہا کہ اووسیزپاکستانی نہ ہوتے تو تحریک انصاف کی بنیاد نہ ہوتی، اووسیز پاکستانی لٹیروں اور مافیا سے نجات چاہتے تھے، امن اور خوشحالی کی راہداریاں تعمیر کرنے نکلے ہیں، اوورسیز پاکستانیوں کی ترسیلات پاکستان کی برآمدات کے برابر ہیں، ایک آپ کی محبت ہے ایک وہ طبقہ ہے جو منی لانڈرنگ کرکے پیسہ بیرون ملک بھیجتا ہے۔

وزیرخارجہ نے مزید کہا کہ امریکا کے پاکستانیوں نے ثابت کردیا وہ زندہ دل ہیں، آپ کے ولولے کو دیکھ کر بہت لوگ خوش ہیں،کچھ پریشان بھی ہیں، شوکت خانم اور نمل یونی ورسٹی کی بنیاد رکھنے میں اوورسیز پاکستانیوں نے اہم کردار اداکیا۔

انھوں نے کہا کہ ماضی میں تقریبات سفارت خانوں اور ہوٹلوں میں ہوتی رہیں، پہلا وزیراعظم ہے جو کمرشل پرواز سے آیا ہے، پہلا وزیراعظم ہے جو فائیو اسٹار ہوٹل نہیں بلکہ پاکستان ہاؤس میں رکا، نئے پاکستان کا نقشہ اور اپنا خواب امریکی صدر کے سامنے رکھیں گے،

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں