30

”امریکہ پابندیاں اٹھائے تو ہم یہ کام کرنے کے لیے بھی تیار ہیں“ ایران نے اعلان کردیا

واشنگٹن(آئی این پی) ایران نے تجویز پیش کی ہے کہ اگر امریکا تہران پر عائد اقتصادی پابندیوں سے مستقل طور پر دست بردار ہو جائے تو ایران اپنے جوہری پروگرام کے وسیع تر معائنے (اضافی پروٹوکول)کو دائمی صورت میں قبول کر لے گا، تہران “اضافی پروٹوکول” پر فوری دستخط کر سکتا ہے جو اقوام متحدہ کے تفتیش کاروں کو ایرانی جوہری پروگرام کے پرامن ہونے کو یقینی بنانے کے لیے زیادہ راستے فراہم کرے گا،دوسری جانب ایک امریکی عہدیدار نے ایران تجویز کو ایک چال قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ ایران صرف نرمی چاہتا ہے لیکن جوہری ہتھیاروں کی دستبرداری کیلئے تیار نہیں۔ برطانوی اخبار “دی گارجیئن” کے مطابق ایران نے تجویز پیش کی ہے کہ اگر امریکا تہران پر عائد اقتصادی پابندیوں سے مستقل طور پر دست بردار ہو جائے تو ایران اپنے جوہری پروگرام کے وسیع تر معائنے (اضافی پروٹوکول)کو دائمی صورت میں قبول کر لے گا۔برطانوی اخبار نے ایرانی وزیر خارجہ محمد جواد ظریف کے حوالے سے بتایا کہ انہوں نے نیویارک میں صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ تہران “اضافی پروٹوکول” پر فوری دستخط کر سکتا ہے جو اقوام متحدہ کے تفتیش کاروں کو ایرانی جوہری پروگرام کے پرامن ہونے کو یقینی بنانے کے لیے زیادہ راستے فراہم کرے گا۔دوسری جانب ایک امریکی ذمے دار نے نام ظاہر نہ کرنے کی درخواست پر بتایا کہ وہ اس معاملے کو شک کی نگاہ سے دیکھتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ایران پابندیوں میں نرمی حاصل کرنے کی کوشش کر رہا ہے جب کہ اس کے مقابل کوئی قابل ذکر چیز پیش نہیں کی گئی۔امریکی ذمے دار کے مطابق ان کی چال یہ ہے کہ پابندیوں کے حوالے سے کسی بھی ممکنہ نرمی کو حاصل کر لیں جب کہ خود مستقبل میں جوہری ہتھیار کے حصول کی صلاحیت محفوظ رکھیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں