31

اگر آپ خوش رہنا چاہتے ہیں تو ہفتے میں کتنے دن کام کرنا چاہئے ؟ سائنسدانوں نے حیرت انگیز جواب بتا دیا

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) ایک وقت تھا کہ ہفتے کے اختتام پر ایک چھٹی ہوا کرتی تھی۔ پھر دو ہونی شروع ہو گئیں اور اب سائنسدانوں نے اس حوالے سے نئی تحقیق میں ایسی بات کہہ دی ہے کہ سن کردفاتر میں کام کرنے والوں کی خوشی کی انتہاءنہ رہے گی۔

بزنس انسائیڈر کے مطابق یونیورسٹی آف آکسفورڈ کے سائنسدانوں نے اس تحقیق کے نتائج میں بتایا ہے کہ اگر ہفتے کے اختتام پر دو کی بجائے تین چھٹیاں شروع کر دی جائیں تو لوگوں کی زندگی میں خوشی کا لیول بہت زیادہ ہو جائے گا اور وہ ذہنی و جسمانی طور پر پہلے سے کہیں زیادہ صحت مند اور چاک و چوبند ہو جائیں گے، جس کے نتیجے میں ہفتے میں جو چار دن وہ کام کریں گے اس میں ان کا معیار اور کارکردگی بہت زیادہ بڑھ جائے گی۔

تحقیقاتی ٹیم کے سربراہ اور یونیورسٹی آف آکسفورڈ میں اکنامکس اینڈ سٹریٹجی کے ایسوسی ایٹ پروفیسر جین ایمانوئیل ڈی نیو کا کہنا تھا کہ ”ہفتے میںتین چھٹیاں کرنے سے لوگوں کی زندگیوں میں کام اور آرام کا ایک توازن آ جائے گا۔ اس طرح لوگوں کو وہ کام کرنے کے لیے زیادہ وقت ملے گا جن سے وہ لطف اندوز ہوتے ہیں۔ ہماری تحقیق میں ثابت ہوا ہے کہ ایسے کام کرنا لوگوں کی تسکین طبع کے لیے اولین ترجیح ہوتے ہیں۔“

بی بی سی ورلڈ نیوز سے بات کرتے ہوئے پروفیسر جین ایمانوئیل کا کہنا تھا کہ ”اس تحقیق میں ہفتے میں کام کے چار دن کر دینے کے ایسے حیران کن فوائد سامنے آئے ہیں کہ ہم پوری دنیا سے مطالبہ کریں گے کہ وہ دفاتر میں ہفتے کے چار دن کام اور تین دن چھٹیاں کریں۔ ہم نے ہفتے میں تین دن چھٹی کے 8ہفتوں پر مشتمل ٹرائیل کیے جن میں معلوم ہوا کہ تین چھٹیاں کر دینے سے لوگوں میں ٹیم ورک کی صلاحیت اور اپنے کام پر توجہ کے ارتکاز کی صلاحیت بہت زیادہ بڑھ جاتی ہے اور ورکرز ایسا معیاری کام کرتے ہیں کہ ہفتے میں ایک یا دو چھٹیاں کرکے اس کا سوچا بھی نہیں جا سکتا۔“

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں