31

بیلسٹک میزائل پروگرام پر کوئی مذاکرات نہیں ہوں گے،ایران

ایران نے امریکہ کے ساتھ اپنے میزائل پروگرام کے بارے میں بات چیت پر آمادگی کے حوالے سے تجاویز مسترد کردی ہیں۔

غیر ملکی خبررساں ادارے کے مطابق اقوام متحدہ میں ایرانی مشن کے ترجمان علی رضا میر نے منگل کے روز سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئیٹر پر جاری بیان میں کہا کہ ایران کے بیلسٹک میزائل پر وگرام پر کسی صورت کسی بھی شخصیت یا ملک کے ساتھ قطعا ًکوئی مذاکرات نہیں ہوں گے۔

اس سے قبل ایران کے وزیر خارجہ جواد ظریف نے ایک انٹرویو میں کہا تھا کہ اگر امریکہ ایران کے میزائلوں کے بارے میں بات چیت کرنا چاہتا ہے تو اسے پہلے خطے کے ملکوں کو میزائلوں سمیت تمام ہتھیاروں کی فروخت بند کرنا ہوگی۔

جبکہ اس سے قبل امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو نے وائٹ ہاؤس میں وزراء کے ایک اجلاس کے دوران کہا تھا کہ ایران نے اس حوالے سے بات چیت کا عندیہ دیا ہے۔

یاد رہے کہ گزشتہ روز ایرانی سپریم لیڈر سید علی خامنہ ای نے وارننگ دیتے ہوئے کہا تھا کہ تہران اپنے جوہری پروگرام پر لگائی گئی پابندیاں ختم کرنے کا سلسلہ جاری رکھے گا اور ایرانی تیل بردار جہاز کو تحویل میں لیے جانے کا جواب دے گا۔

واضح رہے کہ دونوں ملکوں کے بیچ تناؤ میں اضافے کا آغاز گذشتہ سال مئی میں ہوا تھا جب امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے جوہری معاہدے سے علیحدگی کا اعلان کر دیا تھا۔

یہ جوہری پروگرام 2015 میں ایران اور چھ عالمی طاقتوں کے درمیان طے پایا تھا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں