43

پنجاب میں پولیو وائرس کے دو نئے کیسز سامنے آگئے

صوبہ پنجاب میں پولیو وائرس کے دو نئے کیسز سامنے آگئے۔

پولیو پروگرام کے انچارج سلمان غنی نے بتایا ہے کہ پنجاب میں پولیو وائرس کے دو نئے کیسز سامنے آگئےہیں۔ لاہور کے 9 ماہ کے بچے اور جہلم کی ساڑھے تین سالہ بچی میں پولیو وائرس کی تصدیق ہونے کے بعد پنجاب میں پولیو کیسزکی کل تعداد 5 ہوگئی ہے۔

پولیو پروگرام کے انچارج نے واضح کیا ہے کہ پولیو وائرس کا حملہ ہونے کے باوجود لاہور کے بچے میں معذوری کی کوئی علامت نہیں ہے لیکن جہلم کی بچی میں پولیو کے اثرات پائے گئے ہیں۔

لاہور میں انسداد پولیو پروگرام کے نمائندوں سے ملاقات کے دوران ان کا کہنا تھا کہ پولیو کیس کی تحقیقات سے پتہ چلا ہے کہ لاہور میں پولیو سے متاثرہ بچے کے والدین نے کبھی بھی پولیو کے قطروں اور حفاظتی ٹیکوں سے انکار نہیں کیا جس کی وجہ سے بچہ معذوری سے محفوظ رہا۔

وائرس سے متاثرہ دوسری بچی کےبارےمیں ان کا کہنا تھا کہ اس بچی نے بھی انسداد پولیو قطروں کی متعدد خوراکیں لی تھیں لیکن پنجاب میں جاری پولیو وائرس کی گردش کی وجہ سے اس بچی میں وائرس پایا گیا۔

ایمرجنسی آپریشن سینٹر سے جاری بیان کے مطابق پولیو پروگرام پنجاب کے مختلف ضلعوں میں جاری پولیو وائرس کی گردش سے آگاہ ہے اور حکومت اس کو روکنے کے لئے سخت کوششیں کر رہی ہے۔

بچوں میں پولیو وائرس کی موجودگی کے بعد ان ضلعوں میں وائرس کو ختم کرنے کے لیئے 22-25 جولائی کو خصوصی مہم کاانعقاد کیا جائے گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں